Posts Tagged ‘محمد سلیم

ٹیگو ٹیگی۔۔۔!!! I Tag You…

یہ ٹیگو ٹیگی کیا ہے۔۔۔ یہ ٹیگو ٹیگی۔۔۔؟؟؟

ٹیگو ٹیگی کا مطلب۔۔۔!!!!… I Tag You…

رہنے دیں جی ساہنوں کی۔۔۔

ہمیں تو جی حکم ملا کہ ایک عدد ٹیگ کا جواب دیں اور سلسلہِ ٹیگ جاری رکھیں۔۔۔ تو بسم اللہ کرتا ہوں۔۔۔

سوال نمبر 1 :  2012ء میں کیا خاص یا نیا کرنا چاہتے ہیں؟

جواب: انشاءاللہ۔۔۔ اگر اللہ تبارک تعالیٰ نے چاہا تو والدہ کو عمرہ کرواوں گا۔۔۔ والدہ چونکہ بیمار ہیں تو انکی  تمام عبادات وہیل چئیر پر ہونگی۔۔۔ یوں تو کچھ بھی کر لوں ان کی محبت اور خدمت کا صلہ نہیں اتار سکتا۔۔۔ لیکن اپنے تئیں کوشش ضرور کروں گا کہ اپنی ماں کی ہر عبادت میں ان کا ہاتھ تھام سکوں اور اپنے والدین کی حتی الوسع خدمت کر سکوں ۔۔۔۔

سوال نمبر  2 : ۔ 2012ء میں کس واقعے کا انتظار ہے؟

جواب:

۔۔۔ اللہ سے دعا ہے کہ دیار غیر میں مسلمان اپنا مقام پیدا کریں۔۔۔ ناصرف دیار غیر میں۔۔۔ بلکہ اپنے اپنے ممالک میں بھی۔۔۔ اور ایک قوم بن کر ابھریں۔۔۔ آمین۔۔۔

۔۔۔ پاکستان کرکٹ ٹیم، ٹیسٹ اور ون ڈے میں کم از ٹاپ تین میں ہی آ جائے۔۔۔ اور کھلاڑیوں کی رینکنگ میں ٹاپ ٖپانچ میں کم از کم چار پاکستانی بیٹسمین اور بالرتو ہوں ہی۔۔۔ جانتا ہوں کہ یہ کچھ ناممکن لگتا ہے۔۔۔ لیکن انتظار میں کیا جاتا ہے۔۔۔

سوال نمبر 3: سال 2011 کی کوئی کامیابی؟

جواب: جی ہاں۔۔۔ صرف سال 2011 کی ہی نہیں بلکہ عمر بھر کی سب سے بڑی کامیابی، بیت اللہ  اور بیت الرسول کی زیارت کرنا ہے۔۔۔

سوال نمبر 4  ؛ سال 2011 کی کوئی ناکامی؟

جواب : ناکامی تو نہیں، نقصان ضرور کہوں گا۔۔۔ اپنے دوسری اولاد کو پانے سے پہلے ہی کھو دینا، سال کا سب سے بڑا نقصان رہا۔۔۔ (ویسے تو یہ بات یہاں لکھنی نہیں چاہیے تھی۔۔۔ لیکن پتا نہیں کیوں لکھ رہا ہوں)۔۔۔ اس کے علاوہ۔۔۔ اللہ کا بڑا کرم رہا کہ زندگی اچھی گزر رہی ہے۔۔۔ ماشاءاللہ۔۔۔

سوال نمبر 5 : سال 2011 کی کوئی ایسی بات جو بہت یادگار یا دلچسپ ہو؟

جواب: اس سال اپنے دو گہرے دوستوں کے ساتھ بہترین وقت گزارنے کو ملا۔۔۔ عظیم سے عمرے کے دوران سعودی عرب میں ملاقات ہوئی اور مدینہ منورہ میں حاضری کا شرف عظیم کے ساتھ ہی ملا۔۔۔ جبکہ برہان امریکہ سے کچھ عرصے کے لیے امارات آیا۔۔۔ چونکہ ہم دونوں ایک ہی کمپنی کی مختلف شاخوں میں کام کرتے ہیں۔۔۔ تو تقریبا ڈیڑھ ماہ ہم  دونوں نے دبئی کی شاخ میں ایک ساتھ کام کیا اور بہترین وقت گزارا۔۔۔

سوال نمبر 6 : سال کے شروع میں کیسا محسوس کر رہے ہیں؟

جواب: اپنی پرانی نوکری سے استعفیٰ دے دیا ہے اور انشاءاللہ تعالیٰ یکم فروری سے دوسری کمپنی میں کام شروع کر دوں گا۔۔۔ ایکسائیٹڈ ہوں۔۔۔ اللہ تعالیٰ سے رحمت و برکت کی دعا ہے۔۔۔

سوال نمبر 7 : کوئی چیز یا کام جو 2012ء میں سیکھنا چاہتے ہوں؟

جواب: فوٹو گرافی کا بہت شوق ہے۔۔۔ بیگم نے پچھلے سال کے آخر میں نیا کیمرہ تحفے میں دیا۔۔۔ کیمرے کا استعمال سیکھنا چاہتا ہوں۔۔۔

مزید اور زیادہ اہم یہ کہ اللہ کی راہ میں استقامت سیکھنا اور پانا چاہتا ہوں۔۔۔

امید ہے کہ اپنے سارے جوابات تسلی بخش طور پر دیے ہیں۔۔۔ اب ٹیگ کرنے کی باری۔۔۔ زیادہ تر بلاگر دوست تو ویسے ہی ٹیگ ہو چکے ہیں۔۔۔ لیکن میں اپنے کچھ دوست بلاگرز کو دوبارہ ٹیگ کر دیتا ہوں۔۔۔ ہمارا کیا جاتا ہے۔۔۔

ڈاکٹر جواد خان   انکل ٹام   افتخار اجمل بھوپال   محمد سلیم   آپا شاہدہ اکرام

 

Tags : , , , , ,

اردو، سیارہ، بلاگز اور ایوارڈز

آج کل اردو سیارہ سُونا سُونا سا ہے۔۔۔ کافی عرصے سے ایسی کوئی تحریر پڑھنے کو ملی ہی نہیں جسے پڑھ کر ایسا محسوس ہوا ہو، کہ بلاگر سے ملاقات ہو رہی ہے۔۔۔ روزانہ “اردو سیارہ” میں خبروں کا ہجوم نظر آتا ہے۔۔۔ جیسے اردو سیارہ نہیں “جنگ اخبار” پڑھنے کو مل رہا ہو۔۔۔ بس فرق صرف چندے الفاظ کا ہی ہوتا ہے۔۔۔

اگر اخبار نا ہوا تو کچھ اقتباسات اور شاعری پڑھنے کو مل جاتی ہے۔۔۔ یوں محسوس ہوتا ہے کہ لکھاریوں کے پاس اب کچھ “اوریجنل” رہا ہی نہیں لکھنے کے لیے۔۔۔ کاپی پیسٹ، ترجمے پر ترجمے اور وہی سیاسیات پر خبریں۔۔۔

مجھے سمجھ نہیں آرہا کہ کیا یہی “بلاگ” کی صحیح روح ہے۔۔۔ بلاگ کا مطلب کیا ہے اور کیا سے کیا بن گیا ہے۔۔۔؟ میرے ایک عزیز قاری “جناب بلا امتیاز” صاحب نے کچھ عرصے پہلے میری ایک تحریر پر تبصرہ یوں کیا تھا کہ تحریر “واہ واہ” کرنے کے لیے نہیں، اپنی سوچ کی پیاس بجھانے کے لیے ہونی چاہیے۔۔۔ لیکن اب ایسا لگتا ہے کہ بلاگز شخصی بھڑاس نکالنے اور ذاتی سوچ پھیلانے کے لیے نہیں، بلکہ پراپگینڈہ اور تعریفیں سمیٹنے کے لیے استعمال ہو رہے ہیں۔۔۔

اور پھر یوں ہوا کہ “بلاگ ایوارڈز” کا سلسلہ شروع ہوا۔۔۔ کہا گیا کہ اپنا بلاگ خود “نامزد” کریں، اور خود ہی ووٹ کی اپیل بھی کریں۔۔۔ چونکہ بلاگ ایوارڈز والوں کے پاس ایسا کوئی ذریعہ نہیں، جو اچھے بلاگز کی تلاش کرے اور اپنی “قابل” جیوری کے ذریعے انہیں ایوارڈ سے نوازے۔۔۔ اب اگر “افتخار اجمل بھوپال صاحب” یا “ڈاکٹر جواد خا ن صاحب” یا “محمد سلیم صاحب” اپنا بلاگ بذاتِ خود نامزد نہیں کریں گے تو کیا ان کا بلاگ اس قابل نہیں کہ وہ ایوارڈ جیت سکے۔۔۔

ایوارڈز کے لیے اردو کیٹیگری میں جتنے بلاگز نامزد ہوئے ہیں، اس کا واحد مثبت پہلو یہ ہے کہ اردو سیارہ کی بیرونی دنیا اس حقیقت سے روشناس ہوجائے کہ پاکستان میں “اردو بلاگز اور بلاگرز” بھی موجود ہیں۔ جو ہمہ وقت اردو زبان کے فروغ اور اپنی ذاتی رائے عمدہ زبان و بیان کے ساتھ ایک چھوٹی سے دنیا تک پہنچانے میں مصروف ہیں۔۔۔

اب مجھے کوئی یہ بتائے کہ اردو میں خبریں دینے والی ویب سائیٹ ایک بلاگ کیسے ہو سکتی ہے۔۔۔؟ یا ایک ایسی سائیٹ جس میں شاعری کاپی پیسٹ کی گئی ہے۔۔۔ وہ بلاگ کہلانے کے قابل ہے۔۔۔؟

انگریزی بلاگز اور اردو بلاگز میں زمین آسمان کا فرق صرف زبان ہی نہیں، بلکہ سوچ کا بھی ہے۔۔۔ میرا ذاتی تجربہ ہے کہ چند ایک کو چھوڑ کر زیادہ تر انگریزی بلاگ “ترقی پسندی” کے نام پر وطن ، ثقافت اور مذہب کے بڑے نقاد ہیں۔۔۔ چونکہ انگریزی زبان میں بات کرنا اور لکھنا بھی ایک فیشن بن گیا ہے۔۔۔ اور اس فیشن کی مزید جدت “تنقید” ہے۔۔۔ انگریزی زبان میں فقرے کسنا ہے۔۔۔ پاکستان، اسلام اور ثقافت کی ہر ہر بات پر طنز کرنا ہے۔۔۔

اردو بلاگر وں سے مجھے بڑی امیدیں ہیں۔۔۔ نا صرف اردو زبان کا فروغ ضروری ہے، بلکہ اس میں نئی اور مثبت قوتِ تخلیق بھی وقت کی اہم ضرورت ہے۔۔۔۔ اردو بلاگروں میں چند بہت عمدہ لکھنے والے حضرات موجود ہیں۔۔۔ ان صاحبان کے بلاگزکو فروغ دینا بھی دیگر بلاگروں کے لیے ضروری ہے تاکہ نئے پڑھنے والوں کواردو بلاگز کا پہلا تاثر ہی مثبت اور عمدہ ملے۔۔۔

اور پھر اردو بلاگرز کو “ناپختہ ذہنیت” کا الزام بھی سہنا پڑتا ہے۔۔۔ کہتے ہیں کہ جگت بازی اور مذہب کے سوا اردو بلاگروں کے پاس اور کوئی نیا موضوع ہے ہی نہیں۔۔۔ اب یہ الگ بات ہے کہ “کہنے والے” خود جگتوں اور مذہبی تبلیغ کا سب سے بڑا نشانہ رہے ہیں۔۔۔ اورانہوں نے تعصب کو بنیاد بنا کر اچھے لکھاریوں کے بلاگزسے اپنا منہ موڑ رکھا ہے۔۔۔ اس لیے ان میں اور کبوتر میں مجھے کوئی ذیادہ فرق محسوس نہیں ہوتا۔۔۔

میں تو سوچ رہا ہوں کہ چھوڑیں جی “انگریزی مارکہ ایوارڈز” کو۔۔۔ آئیے ہم اپنا اردو بلاگ ایوارڈ -ایوارڈ کھیلتے ہیں۔۔۔

نوٹ: اردو سیارہ چونکہ باقاعدگی سے “اپڈیٹ” نہیں ہو پا رہا ۔۔۔ اور منتظمین بہت مصروف معلوم ہوتے ہیں۔۔۔ کیا ایسا ممکن نہیں کہ انتظامیہ دوسرے ہاتھوں میں سونپ دی جائے تاکہ اردو سیارہ مستقل طور پر اپڈیٹ ہوتا رہے۔۔۔؟

Tags : , , , ,

error: خدا کا خوف کھاو بھائی، کیا کرنا ہے کاپی کر کے۔۔۔
%d bloggers like this: