ڈپلومیسی۔۔۔

151 بار دیکھا گیا

خوامخواہ کی یاریاں نبھاتے میں تو تھک گیا ہوں بھائی۔۔۔ اتنا بھی مجھے دنیا اور دنیا کے لوگوں سے پیار نہیں، جتنا دکھانا اور سمجھانا پڑتا ہے۔۔۔ اب یہ ڈرامہ نہیں تو اور کیا ہے۔۔۔ کہ سامنے والا بک بک پر بک بک کیے جا رہا ہے۔۔۔ اور آپ دستورِ دنیا نبھانے کو اس کی ہاں میں ہاں اور فضول سی مسکراہٹ کے بدلے ایک چھوٹا سا گھٹیا قہقہہ لگانا ضروری سمجھتے ہیں۔۔۔

یار یہ کیا طریقہ ہے۔۔۔ کوئی بندہ پسند نہیں ہے تو اس کے منہ متھے کیوں لگنا۔۔۔ جب دل نہیں چاہ رہا کسی سے بات کرنے کا، تو ایسی کیا مجبوری آ گئی کہ اٹھ کر اس سے گلے بھی ملا جائے۔۔۔ کیا یہ ڈپلومیسی آج کل ہماری جان نہیں مار رہی۔۔۔؟

بنیادی طور پر میں حد درجہ کا بور بندہ ہوں۔۔۔ تنہائی پسند۔۔۔ شور شرابے سے نفرت کرنے والا۔۔۔ سکون کا متلاشی۔۔۔ لیکن شو مئی قسمت کہ سکون اور تنہائی سے میرا دور دور تک کوئی واسطہ نہیں۔۔۔ اب جب بیٹھے بیٹھے کوئی بندہ اپنا سا منہ لے کر میرے منہ لگنے کی کوشش کرتا ہے تو دل چاہتا ہے کہ اس کا منہ پن کے رکھ دوں۔۔۔ مثال کے طور پر:

‘ عمران صاحب، پاس کی کمپنی میں آیا تھا، سوچا آپ سے بھی ہیلو ہائے کرتا چلوں’۔۔۔

’ بھائی تو اُدھر آیا تھا تو اِدھر تیرا کیا کام۔۔۔ مجھے تیری ہیلو ہائے سے کیا لینا دینا۔۔۔’ (اب یہ بھی دل میں سوچا جا سکتا ہے۔۔۔) منہ سے تو نکلا، اچھا کیا جناب چکر لگا لیا۔۔۔ کافی دن سے آپ کے بارے میں سوچ رہا تھا۔۔۔ (آئے ہائے۔۔۔ یہ کیا کہہ دیا۔۔۔ وہ تو واقعی سچ سمجھ بیٹھا۔۔۔ اور یہ کیا، کرسی کھینچ کر بیٹھ بھی گیا۔۔۔ )

‘چائے پلائیں عمران صاحب، بڑی طلب ہو رہی ہے’

‘تیری تو۔۔۔ ً!#$٪ۂۂ&’ بیٹھ بھی گیا تو !#$٪ۂۂ۔۔۔ ‘ (کاش یہ سب کچھ بھی دل میں سوچنے کی بجائے اس کے منہ پر مار دیتا۔۔۔ کم از کم میری جان چھوڑ کر بھاگ جاتا اور پھر کبھی ادھر کا چکر نا لگاتا۔۔۔۔ !#$٪ۂۂ)

اب اس حضرت بندے کی بکواس کا سلسلہ شروع ہوتا ہوتا ایک آدھ گھنٹے تک پہنچ گیا اورمیں اپنی مصروفیت یا کہہ لیں کہ تنہائی کے چند قیمتی لمحات سے بھی ہاتھ دھو بیٹھا۔۔۔

اب میں تو ہوں ہی ایسا۔۔۔  منہ متھے اس لیے لگتا ہوں کہ کسی دانشور کا قول کبھی پڑھ لیا تھا کہ بھائی کسی بھی بندے کے ساتھ برا مت پیش آو۔۔۔ کیا پتا کل کلاں تجھے اس کی ضرورت پڑ جائے۔۔۔ اب کل کی ضرورت کا تو پتا نہیں۔۔۔ یہ ضرور جانتا ہوں کہ میرے آج کا سکون اس بندے کے ہیلو ہائے نے خراب کر دیا۔۔۔ وہ سکون جو میری تنہائی کے روپ میں مجھے ملتا ہے۔۔۔ لیکن سکون اور تنہائی کا مجھ سے کیا واسطہ۔۔

ٹیگز: , , , ,

اس پوسٹ کے بارے میں اپنے احساسات ہم تک پہنچائیں یہاں تبصرہ کریں

تبصرے بذیعہ فیس بک۔۔۔۔

18 تبصرے

تبصرہ کرتے وقت مت بھولئے کہ آپ بہت اچھے/اچھی/درمیانےقسم کے اچھے/ ہیں

error: خدا کا خوف کھاو بھائی، کیا کرنا ہے کاپی کر کے۔۔۔
%d bloggers like this: